(ملک بھر میں حالیہ بارشوں نے تباہی مچا دی (رانا حنا جمیل

(ملک بھر میں حالیہ بارشوں نے تباہی مچا دی (رانا حنا جمیل

(ملک بھر میں حالیہ بارشوں نے تباہی مچا دی (رانا حنا جمیل

ملک بھر میں حالیہ بارشوں نے تباہی مچا دی
(تحریر (رانا حنا جمیل

انسانی غلطیوں نافرمانیوں کیوجہ سے جب اللہ پاک کی پاک ہستی ناراض ہوتی ہے تو مختلف بیماریاں جنگیں زلزلے بارشیں اور فلڈ آتے ہیں جس سے انسان خوف زدہ ہو کر اللہ پاک کو یاد کرتے ہیں مگر جب عذاب ختم ہوتے ہیں تو پھر سے نافرمان انسانی اللہ کو بھول جاتے ہیں اور دنیاوی کاموں میں مشغول ہو جاتے ہیں سال 2020 ایسا سال آیا کہ پہلے کررونا اور اب بارشیں ہمیں اللہ کے حضور سجدہ زیر ہو کر معافی مانگنی چاہیے تاکہ ہم سب اللہ پاک کی حفظ و امان رہیں آٸیے اب ہم ملک بھر میں ہونے والی تباہ کن بارشوں کے نقصانات اور حالیہ فلڈ کا جاٸزہ لیتے ہیں اگست کا موسم آتے ہی انڈیا کے صوبہ راجھستان کی جانب سے صوبہ سندھ میں بادلوں کا بارش برسانے والا ایک طاقت ور سلسلہ پاکستان میں داخل ہوا جبکہ دوسری جانب بلوچستان کی جانب سے دوسرا بارش برسانے والا سسٹم پاکستان میں داخل ہوا جس نے ملکی تاریخ میں کراچی جیسے خوبصورت شہر کو سیلابی علاقہ جات میں بدل کر رکھ دیا کراچی کے تمام اضلاع میں طوفانی بارشوں کے باعث شہر ندی نالوں کا منظر پیش کرنے لگا وہ شہر جس میں لاکھوں روپے کی اعلی شان گاڑیاں چلتی تھی اس شہر میں کشتیاں چلنے لگی بارش کا پانی گھروں میں داخل ہو گیا کچن خراب گھروں میں نوبت فاقوں تک امدادی ٹیمیں بھی بارش کے باعث فلاحی کاموں میں ناکام جبکہ عوامل کی جانب سے ذمےدار حکومت کو ٹھرایا جانے لگا جو کہ بلکل غلط ہے کیونکہ جب بھی کوٸی قدرتی آفات نازل ہوتی ہے تو لوگ اللہ پاک کو یاد کرنے اور توبہ استغفار کرنے کی بجاٸے حکومت کو ذمےدار قرار دینے لگ جاتی ہے جبکہ بارشوں کا یہی طاقتور سسٹم پنجاب میں بھی داخل ہو چکا ہے جس کے باعث لاہور فیصل آباد جھنگ چنیوٹ سرگودہا منڈی بہاولدین حافظ آباد گجرات سیالکوٹ ناروال گجرانوالہ لاہور جہلم کشمیر اسلام آباد میں تباہی مچا دی جس کے باعث چھتیں مکانات گرنے آسمانی بجلی گرنے سے اموات میں بھی اضافہ ہوا جبکہ دریاٸے چناب اور جہلم میں پانی کی سطح بڑھنے لگی حکومت کی جانب سے فلڈ وارنینگ جاری کر دی گی سرکاری اعداد و شمار کے مطابق اس وقت دریاٸے جہلم میں تقریبا دو لاکھ کیوسک پر مشتعمل سیلابی ریلا جھنگ کے علاقہ میں واقع تریموں بیراج کی طرف بڑھنے لگا ہے جبکہ دوسری جانب انڈیا سے آنے والا بارشوں کا پانی جس کی مقدار ہیڈ مرالہ پر تین لاکھ 36ہزار کیوسک ہیڈ خانکی کی طرف بڑھنے لگا ہے جبکہ اس میں نالہ ڈیک نالہ ایک وغیرہ کا پانی اضافی شامل ہے جس سے فلڈ ایریا جات سیالکوٹ گجرانوالہ منڈی بہاولدین چنیوٹ جھنگ جبکہ جہلم خوشاب اور سرگودہا کے نشیبی علاقہ جات میں واقع فصلات کو تباہ کرتا ہوا سندھ کی طرف رواں دواں سے جس سے بڑے پیمانے پر جانی مالی نقصان کا خدشہ ہے جبکہ پانی کی سطح میں مرالہ اور منگلا کے مقام پر اس میں مزید اضافہ ہو سکتا ہے جس کےباعث پنجاب اور سندھ بھر کے سیلابی علاقہ جات میں بڑے پیمانے پر تباہی کا خدشہ پیدا ہو چکا ہے جس سے لوگوں میں غربت کے بڑھنے کے چانسس بڑھنے لگے ہیں ان حالت میں حکومت کے ساتھ ساتھ مخیر حضرات کو بھی عوامی خدمات میں بڑھ چڑھ کر حصہ لینا چاہیے تاکہ لوگوں کی مشکالات میں کمی واقع ہو سکے

admin

leave a comment

Create Account



Log In Your Account



کورونا وائرس سے ڈرنا نہیں لڑنا ہے COVID-19

کورونا وائرس کا مرض بنیادی طور پر متاثرہ شخص کے ساتھ رابطے کے ذریعے پھیلتا ہے جب وہ کھانسی کرتے ہیں یا چھینک کرتے ہیں۔ یہ اس وقت بھی پھیلتا ہے جب کوئی شخص کسی ایسی سطح یا چیز کو چھوتا ہے جس پر وائرس ہوتا ہے ، پھر ان کی آنکھوں ، ناک یا منہ کو چھوتا ہے۔ احتیات اگر آپ کے پاس ہلکے علامات ہیں ، تب تک گھر میں ہی رہیں جب تک آپ صحت یاب نہ ہوجائیں۔ آپ اپنی علامات کو دور کرسکتے ہیں اگر آپ: آرام کرو اور سو جاؤ گرم رکھیں زیادہ پانی پیئو گلے کی سوزش اور کھانسی کو کم کرنے میں مدد کے لئے کمرے میں ہیمڈیفائر استعمال کریں یا گرم شاور لیں

Translate »